Connect with us

متاثرکن کہانیاں

مشکلات میں خدا یاد – متاثرکن سبق آموز کہانیوں کا سلسلہ

آج کی پوسٹ کا عنوان مشکلات میں خدا یاد ہے اور یہ سبق آموز کہانیوں کا ایک سلسلہ آپ قارئین کو پیش نظر ہے. ان چھوٹی مگر معنی خیز کہانیوں سے ہم کو بہتر اور احسن طریقے سے گزارنے کی تعلیم ملتی ہے. آپ سے گزارش ہے کے ایسی اچھی باتیں آپ کو یہاں پڑھنے کو ملتی رہتی ہیں آپ اپنے احباب سے اچھی باتیں بانٹیں اور ہماری اس کاوش ڈالیں شکریہ پڑھیں

Published

on

مشکلات میں خدا یاد

آج کی پوسٹ کا عنوان مشکلات میں خدا یاد ہے اور یہ سبق آموز کہانیوں کا ایک سلسلہ آپ قارئین کو پیش نظر ہے. ان چھوٹی مگر معنی خیز کہانیوں سے ہم کو بہتر اور احسن طریقے سے گزارنے کی تعلیم ملتی ہے

آپ سے گزارش ہے کے ایسی اچھی باتیں آپ کو یہاں پڑھنے کو ملتی رہتی ہیں آپ اپنے احباب سے اچھی باتیں بانٹیں اور ہماری اس کاوش ڈالیں شکریہ پڑھیں

Advertisement

.ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ ایک انجینئرعمارت کی دسویں منزل پر کام کر رہا تھا
ایک مزدود عمارت کے نیچے اپنے کام میں مصروف تھا. انجینئر کو مزدور سے کام تھا
بہت زیادہ اس کو آواز دی. لیکن اس نے نہیں سنی


انجینئر نے جیب سے ١٠٠٠ روپیہ کا نوٹ نکالا اور نیچے پھینکا تاکہ مزدور اوپر کی طرف متوجہ ہو جائے. لیکن مزدور نے نوٹ اٹھا کر جیب میں ڈالا. اور اوپر دیکھے بغیر اپنے کام میں مصروف ہوگیا
دوسری دفعہ انجینئر نے ٥٠٠٠ کا نوٹ نکالا اور نیچے پھینکا. کہ شاید اب کی بار مزدور اوپر کی طرف متوجہ ہو جائے. مزدور نے پھربھی اوپر دیکھے بغیر نوٹ جیب میں ڈال دیا


.اب تیسری دفعہ انجینئر نے ایک چھوٹی سی کنکری اٹھائی. اور اسے نیچے پھینک دیا کنکر کا مزدور کے سر پر لگنا تھا کے اس نے فورا اوپر کی طرف نگاہ کی انجینئر نے اسے اپنےکام کے بارے میں کچھ بتایا
یہ در حقیقت ہماری زندگی کی کہانی ہے. ہمارا مہربان خدا ہمیشہ ہم پر نعمتوں کی بارش کرتا ہے کہ شاید ہم سر اٹھا کر اس کا شکریہ ادا کریں. اس کی باتیں سنیں لیکن ہم اس طرح اس کی بات نہیں سنتے

Advertisement

ہمیں صرف مشکلات میں خدا یاد آتا ہے

لیکن جونہی کوئی چھوٹی سی مشکل، پریشانی یا مصیبت ہماری زندگی میں آتی ہے ہم فورا اس ذات کی طرف متوجہ ہوتے ہیں ہمیں صرف مشکلات میں خدا یاد آتا ہے
پس ہمیں چاہیے کہ ہر وقت جب بھی پروردگار کی طرف سے کوئی نعمت ہم تک پہنچے فورا اس کا شکریہ ادا کریں شکریہ ادا کرنے اور خدا کی بات سننے کے لیے سر پر پتھر لگنے کی ضرورت نہیں ہونی چاہیے!

ضروری گزارش: تازہ تازہ سالگرہ مبارک کی پوسٹ کے ہمارے فیس بک پیج کولائک اور فالو کریں


مزید شاعرانہ پوسٹ کے لئے ہماری پوسٹ پڑھیے – متاثرکن سبق آموز کہانی میری اور ایک گول گپے والے کی – انسانیت زندہ ہے

Advertisement

متاثرکن کہانیاں

ماں کی سالگرہ کا تحفہ

ایک چھوٹے سے چاند کے طرح کی روشنی، ماں کے دل کو چھوا۔ اس کہانی سے محنت اور محبت کی اہمیت کو سیکھیں۔”

Published

on

ماں کی سالگرہ کا تحفہ
Photo:Salgirah.Pk

ماں کی سالگرہ کا تحفہ: اپنی ماں کے لئے خوابوں کا تعبیر کرنا کوئی بڑی بات نہیں تھی۔ جی ہاں، ایک وقت کی بات ہے۔ جب ایک بیٹے نے اپنی ماں کی سالگرہ پر معصوم تمنا کو حقیقت بنانے کا فیصلہ کیا۔ وہ ابھی بے روزگار تھا۔ اور وہ غریبی کا سامنا کر رہے تھے۔ لیکن اس کے دل میں اپنی ماں کے لئے ایک خوشی کا تحفہ دینے کا جذبہ تھا۔

یہ کہنا آسان ہوتا ہے لیکن عملیت میں لانا مشکل تھا۔ وقت کم تھا اور پیسوں کی کمی تھی۔ لیکن ایک بیٹے کی محنت اور محبت نے اس کو مضبوط رہنے کی طاقت دی۔ اپنی ماں کے لئے وہ جو کچھ بھی کرنا چاہتا تھا، وہ اسے ایک مقصد دیکھتا تھا۔

روز رات کو نیند کے بجائے وہ کتابوں کے سامنے بیٹھا رہتا۔ اپنے مستقبل کے راستوں کو تلاش کرتا۔ وقت گزرتا گیا، دن گزرے اور مہینے گزر گئے۔ لیکن اس بیٹے کی توانائی اور سختی میں کوئی کمی نہیں آئی۔

Advertisement

اوّلین روز، جب اس نے اپنی پہلی نوکری حاصل کی، دل کی دھڑکن تیز ہوگئی۔ اب وہ ماں کے جنم دن پر ایک خوشی کا تحفہ لے کر جانا چاہتا تھا۔ جو اس کی ماں کے محنتی ہاتھوں کا پھل ہوتا۔

سالگرہ کے دن، وہ اپنی ماں کے پاس گیا۔ اور ایک چھوٹے سے رنگین ڈبے کو اُس کے قدموں کے سامنے رکھ دیا۔ ماں کی آنکھوں میں خوشی کی کرنوں کی چمک چمک رہی تھی۔

ماں کی سالگرہ کا تحفہ

“بیٹا، تو نے کیا خریدا ہے؟” ماں نے پچھلی پریشانیوں کا ذکر نہیں کیا، بلکہ صرف اپنے بیٹے کی طرف مسکرا کر پوچھا۔

Advertisement

بیٹے نے ڈبے کو کھولا اور ایک سنہری روشنی نکلی۔ وہ ایک چھوٹے سے چاند کو دیکھ کر حیران ہوگئی۔

بیٹے نے ڈبے کو کھولا اور ایک سنہری روشنی نکلی۔ وہ ایک چھوٹے سے چاند کو دیکھ کر حیران ہوگئی۔ ماں کی سالگرہ کا تحفہ

“یہ کیا ہے، بیٹا؟” ماں نے شوق سے پوچھا۔

بیٹے نے مسکرا کر جواب دیا، “یہ چاند میری محنت کا نتیجہ ہے، ماں۔ میں نے آپ کے لئے اس خوشی کا تحفہ تیار کیا ہے۔ آپ کو چاند کی روشنی کی طرح خوشیاں دے سکوں۔”

Advertisement

ماں کے آنسوؤں نے اس بیٹے کی محبت کو جواب دیا۔ وہ اپنے بیٹے کو گلے لگا کر دعائیں دینے لگیں۔ اور اس دن کو اپنی یادوں کا حصہ بنا لیا۔

کہانی کا سبق

اس داستان سے ہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ زندگی کے راستوں پر کبھی بھی ہمیں ہمارے مقصد کی طرف بڑھنا چاہئے۔ چاہے محنتوں کا سفر کتنا بھی مشکل کیوں نہ ہو۔ اگر ہم محبت اور عزم کے ساتھ چلتے رہیں، تو آخر کار کامیابی ضرور ملتی ہے۔ اس کہانی کا ماحول ہمیں یہ یقین دلاتا ہے کہ ایک چھوٹا سا تحفہ بھی ایک بے نظیر محبت کا اظہار ہوسکتا ہے۔ جو پیسوں سے نہیں خریدا جاسکتا۔

ماں کی سالگرہ کا تحفہ
ماں کی سالگرہ کا تحفہ

اس داستان سے ہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ زندگی کے راستوں پر کبھی بھی ہمیں ہمارے مقصد کی طرف بڑھنا چاہئے۔ چاہے محنتوں کا سفر کتنا بھی مشکل کیوں نہ ہو۔

ہمارے سوشل پروفائلز پر مزید اپ ڈیٹ موجود ہوتی ہے. ہمارے سالگرہ فیس بک ، سالگرہ انسٹاگرام ، سالگرہ یوٹیوب اورسالگرہ ٹویٹر کو وزٹ کریں.

Advertisement
Continue Reading

متاثرکن کہانیاں

ایک انجانی سی دوستی کی کہانی

ٹرین کا وقت محدود تھا، اور اب اگلا اسٹیشن آ چکا تھا۔ سمیر نے اپنے دل کی تیز دھڑکن کو کنٹرول کرتے ہوئے کیک کو سیما کے ہاتھوں میں رکھ دیا

Published

on

ایک انجانی سی دوستی
Photo:Salgirah.Pk

ایک انجانی سی دوستی: رات کی گہرائیوں میں ٹرین کا سفر شروع ہوا تھا۔ جب ایک شہر سے دوسرے شہر کا سفر شروع ہوا۔ ایک لڑکی سیما اپنی مخملی چادر میں لپٹی ہوئی، ایک ہاتھ میں کتاب کے ساتھ خوشبو دار کونے میں بیٹھی تھی۔ دوسری طرف ایک جوان سمیر اپنے لیپ ٹاپ پر کام کر رہا تھا، اپنے سوچوں میں ابھی مگن۔

ٹرین کا حرکت کرنا گھنگھور بادلوں کے موسم میں کچھ خوبصورت ہوتا ہے۔ جو ہمیں خوابیدہ تصویری مناظر فراہم کرتا ہے۔ جو بدلتے منظر عالم کی ایک جھلک ہوتی ہے۔

کچھ سفر کے بعد، سیما نے اپنی کتاب کو پلٹ کر شانوں پر رکھ دیا، اور سمیر نے اپنی لیپ ٹاپ کو بند کیا۔ سمیر نے چمکتی ہوئی آنکھوں سے دیکھا کہ سیما اپنی کتاب کی تکتی جا رہی ہے۔ ایک دنیا کی مخلوقات کا تاریک خانہ یہیں تک متقابل ہوئی۔

Advertisement

سمیر: (خود سے) شاید اب میں ان سوالات کا جواب پا سکوں جو میرے دل کو پریشان کر رہے ہیں۔

سیما: (خود سے) ایک دنیا کے ان تاریک رازوں کو جو میں نے اپنی کتاب میں پڑھا ہے، کیا یہ سب حقیقت ہوتی ہے؟

ایک انجانی سی دوستی کی کہانی

سمیر: (سیما کی طرف موڑ کر) آپ کی کتاب میں کیا خوبصورتیاں ہیں؟

Advertisement

سیما: (سمیر کی طرف منہ موڑ کر) کیا آپ واقعی ان تمام معمولی سوالات کے جوابات تلاش کر رہے ہیں جو ہم سوچتے ہیں؟

سمیر: (مسکرا کر) مجھے لگتا ہے ہماری طرح سوچنے والے دونوں لوگ اس دنیا کو بہتر بنا سکتے ہیں۔

سیما: (مسکراتے ہوئے) یہ بات ہو سکتی ہے۔

Advertisement

اسی طرح کے مذاقی باتیں کرتے کرتے، دونوں کی بات چلنے لگی، اور ان کے درمیان انجانی دوستی کی اکھڑکی کھلنے لگی۔ وقت گزرتا گیا، اور دونوں کی باتوں نے ان کے درمیان ایک خوشگوار رابطہ پیدا کیا۔

سمیر: (مسکرا کر) تو اب بتاؤ، تمہارا آج پیدائش کا دن ہے، کیا؟

سیما: (حیرانی سے) ہاں، آپ نے کیسے پتا کیا؟

سمیر: (مسکرا کر) تمہاری کتاب میں ایک خوشبو اڑ کر میرے پاس آئی جسے پڑھ کر۔

Advertisement

سیما: (پیار سے) آپ نے واقعی میری کتاب پڑھی یا میری ڈائری؟

سمیر: (آہستہ سے) جی، میں نے پڑھی بنا پڑھے۔

سیما کے چہرے پر چمک اُگی اور دونوں کے دلوں میں ایک خاص بندھن پیدا ہوا۔

Advertisement

سمیر: تو سالگرہ کی مبارکباد قبول کریں۔

سیما: شکریہ، آپ نے میرے دن کو خوشیوں سے بھر دیا۔

ٹرین کا ایک ایک پل گزرتا گیا، اور پھر وہ موقع آگیا جب دونوں کے دل میں اس خاص موقع کی یادگار کرنے کا فیصلہ ہوا۔

Advertisement

سمیر: (پلٹ کر) مجھے یہاں ایک چیز کی خریداری کرنی ہے، مگر وقت محدود ہے۔

سیما: (حیرانی سے) آپ کیا خریدنا چاہتے ہیں؟

سمیر: (مسکراتے ہوئے) ایک کیک، کیا آپ میرے ساتھ آئیں گی؟

Advertisement

ٹرین کا وقت کم تھا اور کیک خریدنا ممکن نظر نہیں آ رہا تھا، مگر سمیر کا دل بڑا تھا کہ اس موقع کو خوشی سے منانا چاہتا تھا۔

سیما: (مسکراتے ہوئے) بالکل، میں آپ کے ساتھ چلوں گی۔

وقت محدود تھا اور وہ کیک خریدنے کا موقع ہر لحظہ گزر رہا تھا

سمیر نے ایک نظر وقت کی طرف کی اور جب ٹرین ایک اسٹیشن پر رکی۔ وہ جلدی سے اٹھ کر کیک کی دکان کی طرف بھاگا۔ ان کے دل کی دھڑکن تیزی سے چل رہی تھی۔ کیونکہ وقت محدود تھا اور وہ کیک خریدنے کا موقع ہر لحظہ گزر رہا تھا۔

Advertisement

پاس ایک مٹھائی کی دکان پر خوشقسمتی سے کیک بھی موجود تھے۔ دکان پر پہنچ کر، سمیر نے تیزی سے ایک خوبصورت کیک کو منتخب کیا۔ اور اُسے خوشی سے خریدا۔ جب وہ کیک کو اپنے ہاتھوں میں لے کر واپس ٹرین کی طرف بڑھا، وہ جانتا تھا کہ وقت کم ہو چکا ہے اور ٹرین کا اگلا سٹیشن آ چکا ہے۔

سمیر نے جلدی سے ٹرین میں واپس جا کر، سیما کے پاس پہنچا۔ اور اس نے کیک کا باکس کھول دیا۔ سیما کے چہرے پر ایک بڑی مسکراہٹ تھی جو کہہ رہی تھی کہ یہ واقعی ایک خوشی کا لمحہ ہے یا خواب سا ہے۔

سمیر: (پیار سے) جنم دن کی بہت بہت مبارکباد، اور اس خوشی کے موقع پر میں نے آپ کے لئے ایک چھوٹا سا کیک خریدا ہے۔

Advertisement

سیما: (پیار سے) واقعی؟ آپ نے یہ سب میرے لئے کیا؟

سمیر: (مسکرا کر) جی ہاں، آپ کی خوشی کا حصہ بننا چاہتا ہوں۔

ایک انجانی سی دوستی
ایک انجانی سی دوستی

ٹرین کا وقت محدود تھا، اور اب اگلا اسٹیشن آ چکا تھا۔ سمیر نے اپنے دل کی تیز دھڑکن کو کنٹرول کرتے ہوئے کیک کو سیما کے ہاتھوں میں رکھ دیا اور پھر دونوں نے ایک دوسرے کو الوداع کیا۔

انجانے دوستوں کی آنکھوں میں وہ خوشی کا نظارہ تھا جو کہنے والا تھا کہ دو دلوں کی دوستی کی کہانی صرف کتابوں میں ہی نہیں ہوتی، بلکہ حقیقت میں بھی خوشبودار مواقع کو سجایا جاسکتا ہے۔

Advertisement

ہمارے سوشل پروفائلز پر مزید اپ ڈیٹ موجود ہوتی ہے. ہمارے سالگرہ فیس بک ، سالگرہ انسٹاگرام ، سالگرہ یوٹیوب اورسالگرہ ٹویٹر کو وزٹ کریں.

Continue Reading

متاثرکن کہانیاں

دوست کی تمناؤں کی عید: خوشیوں بھری تکمیل اور یادگار مواقع

“جائیں ایک دلچسپ سفر پر سالگرہ متاثرکن کہانیوں کے ساتھ، جہاں خوشیوں اور سبق آموزیوں سے بھرپور داستانیں آپکو انتظار کر رہی ہیں۔”

Published

on

تمناؤں کی عید
Photo:Salgirah.Pk

وہ دن کا وقت تھا جب میرے دوست کا جنم دن تھا۔ میں نے سوچا کہ اس بار ان کی تمناؤں کو پورا کرنا ہے۔ اور ان کو ایک خوشیاں بخشنی ہیں، جو وہ کبھی بھول نہیں سکیں گے۔

تمناؤں کی عید

میں نے کئی دن پہلے ہی ان کی پسندیدہ چیزوں کی تلاش کرنا شروع کی تھی۔ میں جانتا تھا کہ ان کا دل کتنا پیار سے دھڑکتا ہے۔ اور وہ کتنی خوشیوں کی تمنا کرتے ہیں۔ میں نے ان کے دوسرے دوستوں سے بھی رابطہ کیا۔ اور ان سے ان کی پسندیدہ چیزوں کے بارے میں پوچھا۔

ان کے دوستوں کی مدد سے، میں نے ایک خوبصورت فیصلہ لیا۔ میرا منصوبہ تھا کہ ان کے دوستوں کو بھی شامل کر کے ایک خوشی کا مجلس منائیں۔ میں نے ایک خوبصورت تالاب تلاش کی جہاں پر ہم ایک پرانا قصبہ سجا سکتے تھے۔

Advertisement

مجلس کا دن آ گیا، اور میں نے دوست کو اپنے منصوبے کے بارے میں بتایا۔ ان کی آنکھوں میں خوشی کی کرن کے لئے کوئی حد نہیں تھی۔ ہم نے مل کر قصبے کو زندگی دینا شروع کی، ہر ایک نے اپنی انوکھی تخلیق کاری اور محبت کا اظہار کیا۔

رات کے وقت، جب سورج غروب ہوا اور سب کچھ چمکنے لگا، تو وہ منظر بے مثال تھا۔ قصبے کی روشنی، سالگرہ والے دوست کی مسکراہٹ اور دوستوں کی محبت نے ایک خوابیدہ طلسمی ماحول کو جگا دیا جو ہمیشہ یاد رہے گا۔

اس خوشی کے موقع پر، ہم نے دوست کو ایک خصوصی تاروں سے سجی ہوئی کٹھ پتلی تحریر دی، جس میں ہماری دوستی کے جذبات اور محبت کو بیان کیا گیا تھا۔

تمناؤں کی عید
دوست کی تمناؤں کی عید

یہ دن ہمارے دوست کے لئے نہ صرف خوبصورت تھا، بلکہ ایک یادگار موقع بھی۔ جو ہم سب کبھی نہ بھول سکیں گے۔ دوست کی خوشیوں کو دیکھ کر مجھے یہ محسوس ہوا کہ حقیقت میں ایک سچے دوست کو خوش دیکھنا سب سے بڑی تحفہ ہوتا ہے۔

ہمارے سوشل پروفائلز پر مزید اپ ڈیٹ موجود ہوتی ہے. ہمارے سالگرہ فیس بک ، سالگرہ انسٹاگرام ، سالگرہ یوٹیوب اورسالگرہ ٹویٹر کو وزٹ کریں.

Advertisement
Continue Reading

سالگرہ

salgirah logo in urdu 2021

سالگرہ مبارک ویب سائٹ پر آپ کو خوش آمدید – سالگرہ ڈاٹ پی کے اردو میں سالگرہ کے موضوع پر آن لائن سب سے بڑا ذخیرہ ہے. آپ کو بہت بہت سالگرہ مبارک ہو! “سالگرہ” ویب سائٹ پر آپ کو سالگرہ کی مزاحیہ شاعری، سالگرہ وش، بیٹی کی سالگرہ مبارک، بیوی کو شادی کی سالگرہ مبارک، سالگرہ مبارک بھائی، میری سالگرہ کا دن مضمون، سالگرہ مبارک کیک، سالگرہ مبارک ہو بہن، سالگرہ مبارک دعائیں، جنم دن مبارک دوست، سالگرہ مبارک ہو بھائی، جنم دن کی شبھ کامنائیں، بیوی کو سالگرہ مبارک، جنم دن مبارک بھائی، جنم دن مبارک بہن، سالگرہ کی مبارکبادیاں، شوہر کو شادی کی سالگرہ مبارک، شادی کی پہلی سالگرہ مبارک، منگنی مبارک شاعری، سالگرہ کے گانے
شریک حیات شاعری، امی سالگرہ مبارک ، ابو سالگرہ مبارک، بیٹی سالگرہ مبارک، بیٹا سالگرہ مبارک، دوست سالگرہ مبارک، محبوب سالگرہ مبارک، ساتھی سالگرہ مبارک، جان سالگرہ مبارک، منگیتر سالگرہ مبارک، استاد سالگرہ مبارک، یار سالگرہ مبارک، آپ کی شخصیت، آپ کے ستارے کیا کہتے ہیں، جنم دن زائچہ، آپ کے برج، سالگرہ کی تقریبات، سالگرہ انتظامات، سالگرہ پیغامات، سالگرہ لطیفے، اقوال زریں، سبق آموز کہانیاں، سالگرہ ویڈیوز، سالگرہ تصاویر، مختصر سالگرہ پیغام، متاثر کن تحریریں، واقعات، تاریخ میں آج کے دن کیا ہوا؟ پڑھنے کو ملے گا.

Advertisement
Advertisement

عنوانات

تفصیلی فہر ست

رجحانات